آصف زرداری نے ایم کیو ایم پاکستان سے معاہدہ کیوں کیا (اصل کہانی کیا ہے)

آصف زرداری نے ایم کیو ایم پاکستان سے معاہدہ کیوں کیا؟

آصف زرداری شیر کی طرح طاقت ور اور بہادر نہیں بالکہ لومڑی کی طرح مکار اور کایوٹی کی طرح بے رحم سیاستدان ہیں

15 سال بھٹو خاندان کا چورن بیچنے اور بھٹوز کی لاشیں اٹھائے پھرنے کے بعد انہیں یقین ہو گیاہے سندھ دیہی پی پی کا ہے اور بے وقوف ووٹر کہیں نہیں جاتے۔۔۔ اب سندھ شہری کو قابو کرو۔

جب ہم سندھ شہری کی بات کرتے ہیں تو سندھ میں مہاجروں کے صرف دو شہر کراچی اور حیدرآباد ہیں۔۔
میرپورخاص، سکھر، ٹنڈو آدم اور چھوٹے چھوٹے قصبوں کو مہاجروں کے شہر نہیں کہ سکتے(اسمبلی سیٹوں کے لحاظ سے) کیونکہ پچھلے 32 سالوں سے ان شہروں سے کوئ قومی یا صوبائی اسمبلی ممبر مہاجر نہیں جیتا ہاں البتہ اندرون شہر ہونے کی وجہ سے میرپورخاص شہر سے بلدیہ کی حد تک چئیرمین بن جاتا ہے۔

الطاف حسین کی سیاست ختم ہونے کے بعد سندھ شہری میں مہاجروں کا وہی حال ہے جو راستہ پر پڑی کوئ قیمتی چیز کا ہوتا ہے پھر جس کے ہتھے لگے۔
جیسے 2018 میں جنرلوں نے کراچی کی 22 سیٹوں میں سے 14 اٹھا کر پی ٹی آئ کو دے دیں تھیں ورنہ عمران خان کا باپ بھی ایک سیٹ نہیں نکال سکتا تھا
یاد نہیں الطاف حسین کے ہوتے ہوئے عمران خان کراچی گھس نہیں سکے تھے اور ائرپورٹ سے ہی واپس چلے گئے تھے

آصف زرداری نے سندھ ووٹرز کو قابو کرنے کے بعد کراچی اور حیدرآباد کو قابو کرنے کی سوچی (ووٹرز کو نہیں ان کی لیڈرشپ کو)۔
زرداری صاحب کی دلچسپی ان دونوں شہروں کے مہاجروں سے نہیں ان شہروں کی قومی اور صوبائ اسمبلی سیٹوں سے ہے جو 100 سے زیادہ ہیں۔

آصف زرداری سندھ کے مہاجروں کو ٹھینگا دیں گے ہاں البتہ الیکشن کے وقت ایم کیو ایم کی۔لیڈرشپ سے سودا ضرور کریں گے کہ پی پی کو کراچی سے 12- 14 قومی اسمبلی اور اسی طرح حیدرآباد سے اور پھر دونوں شہروں سے صوبائ کی سیٹیں دو۔
ایم کیو ایم پاکستان کی موجودہ لیڈرشپ نہ محب وطن ہے اور نہ محب مہاجر وہ سب اٹھائ گیرے، سوداگر اور سستے کاروباری ہیں۔

زرداری صاحب ایم کیو ایم پاکستان کی لیڈرشپ کے منہ پر دو دو کروڑ ماریں گے اور یہ بھوکے ننگے لیڈر مہاجروں کو بیچ دیں گے۔آصف زرداری دور کی سوچ رہے ہیں۔
وہ اگر قومی اسمبلی کی یہی 14 پی ٹی آئ والی سیٹیں کراچی/حیدرآباد سے لے لیں تو اندرون سندھ تو ویسے ہی پی پی کا ہے تو وہ آئندہ وقتوں میں اگر 10 سیٹیں بھی پنجاب سے لے لیں اور پنجاب میں انہیں چوہدریز، جہانگیر ترین، علیم خان جیسے مل گئے تو وہ ن لیگ کی کمر توڑ سکتے ہیں۔

ہاہاہاہا۔۔۔
کتنی دور کی پلاننگ یے زرداری صاحب کی۔لیکن انہیں معلوم نہیں ان کی آنکھ بند ہوتے ہی پی پی ایسی یوگی جیسی جتوئ، ممتاز بھٹو، غناع بھٹو کے دور میں تھی۔۔۔پھر بٹے گی جوتیوں میں دال جسطرح الطاف حسین کے بعد ایم اکیو ایم میں بٹی ہوئ ہے۔

شفیق خان، کینیڈا
مارچ 19، 2022

SHAFIQ KHAN, CANADA

Author: HYMS GROUP INTERNATIONAL

ex Chairman Edu Board, Reg Dir Sindh Ombudsman, Bank Exec; B.A(Hons) M.A English, M.A Int Rel, LL.B, 3 acreds from Canada

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out /  Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out /  Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out /  Change )

Connecting to %s

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.

%d bloggers like this: